اکتوبر 28, 2021

ڈیلی سویل۔۔ زمیں زاد کی خبر

Daily Swail-Native News Narrative

ایئر لائنز کو 88 کھرب 64 ارب روپے کا نقصان

اس سال ایئر لائنز کو 51.8 بلین ڈالر یعنی 88 کھرب 64 ارب روپےکا نقصان اٹھانے کی توقع ہے

عالمی ہوا بازی کی صنعت کو ابھی مزید نقصان اٹھانا پڑے گا

کیونکہ آہستہ آہستہ بحالی سے مستقبل قریب میں ان کے نقصانات میں کمی کا امکان نہیں ہے

88 کھرب 64 ارب روپے کا نقصان اپریل میں لگائے گئے

تخمینہ 47.7 بلین ڈالر کے نقصان سے 8.6 فیصد زیادہ ہے۔

انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (آئی اے ٹی اے) نے کہا

کہ 2021 میں 51.8 بلین ڈالر کے نقصان کے بعد 2022 میں خالص صنعت کے

نقصانات 11.6 بلین ڈالر تک کم ہونے کی توقع ہے ۔

ایئر لائن انڈسٹری کی مالی کارکردگی کے لیے اپنے تازہ ترین نقطہ نظر میں ، عالمی ہوا بازی کے ادارے نے کہا کہ

سست رفتار بحالی اور دنیا بھر میں سفری پابندیوں کی وجہ سے 2020 کے نقصانات کا تخمینہ 126.4 بلین ڈالر سے بڑھ کر 137.7 بلین ڈالر ہو گیا ہے۔

بوسٹن میں اپنی سالانہ جنرل میٹنگ میں جاری کردہ ادارے کے بیان کے

مطابق 2020-22 میں انڈسٹری کے کل نقصانات 201 بلین ڈالر تک پہنچنے کی توقع ہے۔

آئی اے ٹی اے کا تخمینہ ہے کہ اگلے سال مسافروں کی کل تعداد بڑھ کر 3.4 بلین ہوجائے گی

جو کہ 2021 میں 2.3 بلین سے زیادہ لیکن 2019 میں 4.5 بلین سے کم ہوگی۔

آئی اے ٹی اے کے ڈائریکٹر جنرل ولی والش نے کہا کہ ایئر لائنز کے لیے

کوویڈ 19 کے بحران کی شدت بہت زیادہ ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ائیرلائنز نے اپنی بقا کے لیے ڈرامائی طور پر اخراجات

میں کمی کی ہے اور اپنے کاروبار کو جو بھی مواقع دستیاب تھے

اس کے مطابق ڈھال لیا ہے۔ جس کے بعد 2020 کا 137.7 بلین ڈالر کا نقصان اس سال کم ہو کر 52 بلین ڈالر رہ جائے گا۔

اور یہ 2022 میں مزید 12 بلین ڈالر تک کم ہو جائے گا ۔

انہوں نے کہا ہم بحران کے سب سے گہرے نقطے سے گزر چکے ہیں۔

اگرچہ سنگین مسائل باقی ہیں لیکن بحالی کا راستہ سامنے آ رہا ہے۔

ہوا بازی ایک بار پھر اپنی لچک کا مظاہرہ کر رہی ہے

%d bloggers like this: